Welcome to MuftiArbab.com - A Spiritual Page!


ایمان کے سلب اور ختم ہونے کا ذریعہ

ہر شخص کو اپنے ایمان کے بارے میں ڈرنا چائے
امام بخاری رحمہ اللہ نے باقاعدہ ایک باب قائم فرمایا ہے
بَابُ خَوْفِ الْمُؤْمِنِ مِنْ أَنْ یَّحْبَطَ عَمَلُہٗ وَہُوَ لاَ یَشْعُرُ۔
یعنی ایمان والے کو اس بات سے ڈرنا چاہئے کہ کہیں اس کے اعمال برباد نہ ہوجائیں اور اس کو پتہ بھی نہ چلے. اس باب کا مقصد بیان کرتے ہوئے علامہ انور شاہ کشمیر رحمہ اللہ فرماتے ہیں کہ: میرے نزدیک اس باب کا خلاصہ یہ ہے کہ آدمی کو گناہوں پر جری (نڈر) ہونے سے بچنا چاہئے اور سوء خاتمہ (بری موت) سے بھی ہمیشہ ڈرنا چاہئے اپنی دینداری سے دھوکہ نہیں کھانا چاہئے، کیونکہ گناہوں کی وجہ سے اگرچہ آدمی کافر نہیں بنتا؛ لیکن بہت سارے گناہ ایسے بھی ہیں جو آدمی کے ایمان کے سلب اور ختم ہونے کا ذریعہ بن جاتے ہیں۔
(فیض الباری شرح البخاری، کتاب الایمان، باب خوف المؤمن الخ، صفحہ: 219، جلد: 1)

 



Leave a Comment