Welcome to MuftiArbab.com - A Spiritual Page!
کیا یہ حدیث ہے کہ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا جو بندہ نکاح کرے اور مہر نہ دینے کی جس کی نیت ہو وہ اپنی بیوی سے زنا کر رہا ہے؟

بسم الله الرحمن الرحيم
الجواب وبالله التوفيق
اگر کسی شخص نے عورت سے نکاح کیا اور مہر بھی مقرر ہوا، لیکن اس شخص کی نیت مہر ادا کرنے کی نہیں ہے، تو ایسا شخص عورت کے ساتھ بغیر مہر کے ہم بستری کرکے زانی شمار کیاجائے گا۔
چنانچہ مصنف ابن ابی شیبہ کی روایت میں ہے
قال النبي صلى الله عليه وسلم: من نكح امرأةً وهو يريد أن يذهب بمهرها فهو عند الله زان يوم القيامة".(4/360)
ترجمہ:جو شخص کسی عورت سے نکاح کرے اور مہر ادا کرنے کی نیت نہ رکھتاہو وہ عنداللہ زانی ہے۔
المبسوط للسرخسی میں ہے :
و الدليل عليه أنها تحبس نفسها؛ لاستيفاء المهر، و لاتحبس المبدل إلا ببدل واجب و إن بعد الدخول بها يجب. و لا وجه لإنكاره؛ لأنه منصوص عليه في القرآن." (6/190)
بدائع الصنائع میں ہے :
و كذا لها أن تحبس نفسها حتى يفرض لها المهر و يسلم إليها بعد الفرض، وذلك كله دليل الوجوب بنفس العقد." (5/468) فقط والله اعلم