Welcome to MuftiArbab.com - A Spiritual Page!
شرعی مسافر کے لئے روزہ اور اس کی قضا

سوال:اگر کسی شخص کو رمضان میں سفر کرنے کی ضرورت پیش آجائے اور روزہ رکھنے سے اس کو بہت زیادہ بے چینی ہوتی ہو تو کیا وہ شخص افطار کرسکتا ہے؟
سم الله الرحمن الرحيم
جن اعذار کی وجہ سے روزہ نہ رکھنا جائز ہے ، ان میں ایک سفر شرعی بھی ہے؛ لہٰذا اگر کوئی شخص ماہ رمضان میں مسافر شرعی ہو تو اس کے لیے روزہ نہ رکھنا جائز ہے البتہ اگر سفر کی روزہ کی وجہ سے روزہ میں کوئی خاص مشقت وپریشانی نہ ہو تو روزہ رکھنا افضل ہے اور اگر سفر کی وجہ سے روزہ میں مشقت وپریشانی کا اندیشہ ہو تو روزہ نہ رکھنا افضل ہے، البتہ رمضان کے بعد چھوٹے ہوئے روزوں کی قضا کرنی ہوگی ۔
لمسافر سفراً شرعیاً ………الفطر، …، وقضوا لزوماً ما قدروا بلا فدیة وبلا ولاء، …، ویندب لمسافر الصوم لآیة: ﴿وأن تصوموا﴾ والخیر بمعنی البر لا أفعل التفضیل إن لم یضرہ فإن شق علیہ، …فالفطر أفضل الخ (الدر الختار مع رد المحتار، کتاب الصوم، فصل فی العوارض المبیحة لعدم الصوم ۳: ۴۰۳- ۴۰۵، ط: مکتبة زکریا دیوبند)
واللہ تعالیٰ اعلم دارالافتاء دارالعلوم دیوبند